البرٹو فرنینڈس ارجنیٹنا کے نئے صدر منتخب

بیونس آئرس: ارجنٹینا میں بائیں بازو کے امیدوار البرٹو فرنینڈس صدارتی انتخابات میں صدر کو شکست دے کر ملک کے نئے صدر منتخب ہوگئے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق ارجنٹینا میں صدارتی الیکشن کے لیے بائیں بازو کے امیدوار البرٹو فرنینڈس نے 45 فیصد ووٹ حاصل کرکے کنزرویٹو پارٹی سے تعلق رکھنے والے ملک کے صدر ماؤرکیو میکری کو شکست دی۔

برطانوی میڈیا کے مطابق انتخابی عمل کے بعد 90 فیصد ووٹوں کی گنتی مکمل ہوچکی ہے جس میں البرٹو فرنینڈس نے 47.79 اور ان کے مد مقابل ارجنٹینا کے صدر میکری نے 40.71 فیصد ووٹ حاصل کیے جب کہ انتخابات میں کامیابی کے لیے امیدوار کو 45 فیصد ووٹ درکار ہوتے ہیں یا پھر 40 فیصد ووٹوں کے ساتھ مدمقابل پر 10 پوائنٹ کی لیڈ اس کی کامیابی میں مدد کرتی ہے۔

البرٹوکی فتح کے بعد ان کے حامیوں کی بڑی تعداد الیکشن کمیشن ہیڈکوارٹر کے باہر جشن منانے کے لیے جمع ہوگئی اور انہوں نے اپنے امیدوار کی کا کامیابی پر ایک نئے ارجنیٹنا کی تعمیر کی امید ظاہر کی۔

البرٹو کے مد مقابل کنزرویٹو پارٹی کے میکری اور ارجنٹینا کے صدر نے انتخابات میں اپنی شکست قبول کرتے ہوئے نئے صدر کو مبارکباد دی اور انہیں انتقال اقتدار کے لیے صدارتی محل آنے کی بھی دعوت دی۔

انتخابات میں کامیابی کے بعد اپنے حمایتوں سے گفتگو کرتے ہوئے نئے منتخب صدر البرٹو فرنینڈس کا کہنا تھا کہ انہیں جہاں بھی ضرورت ہوئی وہ دستبردار ہونے والے صدر سے مدد حاصل کریں گے۔

خیال رہے کہ ارجنیٹنا شدید معاشی بحران کا شکار ہے جہاں عوام کی ایک تہائی آبادی انتہائی غربت کا شکار ہے۔