سمندری طوفان کیار کراچی سے 750 کلو میٹر دور، ماہا کے بھی آنے کا امکان

کراچی: سمندر طوفان کیار کے باعث شہر میں آج تیز ہوائیں چلنے کا امکان ہے جب کہ طوفان سے ساحلی پٹی کے علاقے زیر آب آگئے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں سائیکلون کیار کے باعث آج تیز ہوائیں چلنے کا امکان ہے اور شمال مشرق سے 18 سے 27 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گرد آلود ہوائیں چل سکتی ہیں۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہےکہ آج کراچی کا زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 35 سے37 سینٹی گریڈ تک رہ سکتا ہے اور شہر میں کم سے کم درجہ حرارت 22 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جب کہ ہوا میں نمی کا تناسب 33فیصد ہے۔

ساحلی علاقوں میں سمندر کا پانی گھروں میں داخل

دوسری جانب سمندری طوفان کیار کے باعث رات گئے سمندر کی سطح بلند ہوگئی اور ساحلی پٹی پر واقع علاقے زیر آب آگئے۔

طوفان کے باعث ابراہیم حیدری کےعلاقے ریڑھی گوٹھ، لٹھ بستی اور چشتہ گوٹھ کے گھروں میں سمندری پانی داخل ہوگیا۔

محکمہ موسمیات نے طوفان کے سبب مچھیروں کو گہرے سمندرمیں نہ جانے کی ہدایت کی ہے۔

’سائیکلون کیار کراچی سے 750 کلو میٹر دور ہے‘

علاوہ ازیں محکمہ موسمیات کا بتانا ہےکہ بحیرہ عرب سے اٹھنےوالا سپر سائیکلون کیار شمال مغرب کی جانب بڑھ رہا ہے اور  سمندری طوفان کا رخ اومان کی جانب ہے جو کراچی سے 750کلومیٹر دور ہے۔

ڈائریکٹر محکمہ موسمیات سردار سرفراز نے بتایا کہ 30 اکتوبر تک مغربی ہواؤں کا سسٹم سائیکلون پر اثر انداز ہوسکتا ہے، مغربی ہواؤں کا یہ سسٹم سائیکلون کو کمزرو کردے گا یا رخ جنوب کی جانب کرسکتا ہے البتہ سائیکلون جنوب کی جانب ہونے پر پاکستان کے ساحلی علاقوں میں ہلکی بارش ہوسکتی ہے اور گہرے سمندر میں لہریں 3سے 4میٹر تک بلند ہوسکتی ہیں۔

سردار سرفراز کے مطابق سائیکلون کیار کے اثرات 2 نومبر تک رہیں گے اور 30 اکتوبر کو بھارت کےجنوب مغرب میں کرناٹک کےقریب ہواکاایک اورکم دباؤ بن سکتا ہے جس کے باعث ہوا کا کم دباؤ ڈپریشن یا سائیکلون میں تبدیل ہوسکتا ہے، سائیکلون بننے کی صورت میں اسے ماہا کا نام دیا جائے گا۔