WordPress database error: [Table 'db821282199.YhPGeuvMupviews' doesn't exist]
SELECT * FROM YhPGeuvMupviews WHERE user_ip = '3.235.107.209' AND post_id = '816'

WordPress database error: [Table 'db821282199.YhPGeuvMupviews' doesn't exist]
SHOW FULL COLUMNS FROM `YhPGeuvMupviews`

عازمین حج کی آمد سے قبل منیٰٰ، مزدلفہ اور عرفات کے مقامات سینییٹائز کر دیے گئے

ورونا وائرس کے پیش نظر حج سے  پہلے منیٰ، مزدلفہ اور عرفات میں تمام مساجد میں صفائی اور جراثیم کش اسپرے کا کام مکمل کر لیا گیا ہے۔ 

سعودی وزارت اسلامی امور نے حج سے پہلے منیٰ، مزدلفہ اور عرفات میں تمام مساجد میں صفائی ستھرائی کا کام مکمل کر لیا ہے۔

مسجد نمرہ میں نیا ائیرکنڈیشن سسٹم آپریشنل کر دیاگیا ہے جب کہ عازمین کے لیے اسپیشل واش روم تیار کرائے گئے ہیں اور  ان کے لیے خصوصی گزر گاہیں بھی بنائی گئی ہیں۔

مسجد نمرہ میں ایک لاکھ 10 ہزار مربع میٹر سے زیادہ رقبے پر قالین بچھائے گئے ہیں، اس کے علاوہ مسجد میں سی سی ٹی وی کیمرے اور حج کرنے والوں کے لیے رہنما اسکرین بھی نصب کی گئی ہیں۔

مزدلفہ میں مسجد المشعر الحرام کو بھی تمام سہو لتوں سے آراستہ کر دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب نے جون میں اس سال کورونا وائرس کی وبا کے پیش نظر محدود پیمانے پر حج کا اعلان کیا تھا۔

سعودی حکام کے مطابق اس مرتبہ صرف 10 ہزار عزام کرام حج بیت اللہ کی سعادت حاصل کر رہے ہیں جن کا انتخاب خودکار طریقے سے کیا گیا ہے۔

ان میں سعودی عرب میں مقیم غیرملکی تارکینِ وطن کی تعداد 70 فی صد ہے اور 30 فی صد سعودی شہری ہیں۔

منتخب عازمین کے پہلے گروپ کو ہفتے کے روز مکہ مکرمہ پہنچا دیا گیا ہے، عزام کرام ایامِ حج کے آغاز سے قبل ایک ہوٹل میں الگ الگ کمروں میں مقیم رہیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس 25 لاکھ سے زیادہ فرزندانِ توحید نے فریضۂ حج ادا کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں