سکھر رپورٹ۔امداد علی گل کلوڑ

سکھر(رپورٹ۔امداد علی گل کلوڑ )سکھر کے شہریوں کیساتھ جعلسازی کے زریعے اربوں روپے بٹورنے والے افراد کی مبینہ زیادتیوں کے خلاف متاثرہ سکھر کے شہریوں کی بڑی تعدادسکھر کی سیاسی ، سماجی ، تاجر تنظیموں کے ہمراہ سکھر پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور ملوث افراد کی عدم گرفتاری کے خلاف نعرے بازی کی مظاہرے میں شامل متاثرین آغا عارف درانی ، الہہ داد بوزدار ، ثاقب شیخ ، احسان نوناری سمیت سیاسی و تاجر تنظیموں کے رہنماﺅں خورشید احمد میرانی ، عدنان راجپوت ، اعظم خان ، اعظم میمن سمیت دیگر کا کہنا تھا کہ لالہ جہانزیب اینڈبرادرز ، عمر جان اینڈکو کے نام پرلالہ جہانزیب ، عالم زیب ، مشتاق و دیگر نے سکھر کے شہریوں سے ڈھائی ارب روپے سے زائد رقم کا فراڈ کیا اور فرار ہو گئے ہیں ، جعلسازوں کے خلاف سکھر کے مختلف تھانوں پر مقدمات درج ہیں ، گذشتہ روز ملوث ایک ملزم عالم زیب کو تھانہ اے سیکشن پولیس کے ہاتھوں گرفتار کرایا گیا لیکن پولیس نے ملی بھگت کر کے رشوت کے عیوض نامزد ملزم کو رہا کر دیا اور اس کی گرفتاری سے لاعلمی ظاہر کر دی جو سراسر ظلم و زیادتی ہے شکایات اور مقدمات درج ہونے کے باوجود شہریوں کی داد رسی کرنے کو کوئی تیار نہیں ہے سکھر کے شہری جعلسازی کے باعث اپنی لاکھوں روپے کی رقم گنوا چکے ہیں لیکن ابتک ملوث ملزمان کے خلاف کسی قسم کی کاروائی عمل میں نہیں لائی جا رہی ہے مظاہرین نے چیف جسٹس آف پاکستان ، وزیر اعظم پاکستان ، وزیر اعلیٰ سندھ ، وزیر داخلہ ، ایس ایس پی سکھر سمیت دیگر بالا حکام سے نوٹس لیکر ملوث افراد کو فی الفور گرفتار کر کے لوٹی ہوئی رقم واپس دلانے کا پرزور مطالبہ کیا ہے ۔