سانگی میں جتوئی اور جاگیرانی قبائل میں جاری تنازعہ کا تصفیہ ،دونوں قبائل پرمجموعی طور پر 31 لاکھ روپے ہرجانہ عائد

سکھر ضلع کی تحصیل پنوعاقل کے علاقے سانگی میں جتوئی اور جاگیرانی قبائل کے درمیان جاری خونی تنازعہ کے تصفیے کے لیے ایک اجتماع سکھر کے مقامی ہوٹل میں منعقد ہوا جس کی سرپنچی سردار عابد حسین جتوئی ،سردار شمشاد سندرانی نے کی اجتماع کے دوران دونوں فریقین کے بیانات سنے گئے اور ان کی روشنی میں فیصلہ سنایا گیا جس کے تحت جاگیرانی قبیلے پر جتوئی قبیلے کے افراد کی تذلیل کرنےاور لوگوں کو زخمی کرنےپرمجموعی طور پر سترہ لاکھ روپے اور جتوئی قبیلےپرجاگیرانی برادری کے افراد کی تذلیل کرنے اور زخمی کرنے پر مجموعی طور پر چودہ لاکھ روپے۔ہرجانہ عائد کیا گیا اس طرح دونوں قبائل۔پر۔مجموعی طور پر 31لاکھ روپے ہرجانہ عائد کیا گیا جو دونوں قبیلے ایک دوسرے کو ادا کریں گے فیصلے کے بعد دونوں فریقین گلے لگ کر شیر و شکر ہوگئے واضح رہے۔کہ گذشتہ دنوں دونوں قبیلوں کی جانب سے ایک دوسرے کے افراد کو پکڑ کر تذلیل کا نشانہ بنایا گیا تھا ان واقعات کے بعد علاقہ میں کشیدگی بڑھ گئی تھی اور دونوں قبیلوں کی جانب سے علاقے میں ایک دوسرے پر فائرنگ کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری تھا ،تصفیے کے بعد علاقہ میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے